Himmat-aur-Tofeeq

ہمت و توفیق

ہمت و توفیق

* طالبِ مولیٰ کی ہمت پہاڑوں کو بھی ریزہ ریزہ کر دیتی ہے۔
* ہمت کے بغیر راہِ فقر پر چلنا بہت دشوار ہو جاتا ہے، فقر کی تمام منازل توفیقِ الٰہی کے ساتھ ساتھ ہمت سے طے ہو تی ہیں۔
* راہِ فقر میں توفیق سے مراد مرشد کامل کی نگاہ اور مہربانی ہے۔ مرشد کا ساتھ ہی طالب کے لیے ’توفیق‘ ہے۔
* توفیق طالبِ مولیٰ کے لیے اکسیر ہے۔ اگر وہ اپنی نگاہ ’توفیق‘ پر رکھے گا اور’ ہمت ‘ بروئے کار لائے گا تو اس کا ہر کام آسان ہو جائے گا۔
* توفیق اور ہمت لاز م و ملزوم ہیں جس قدر طالب ہمت کرے گا اتنی ہی اس کو توفیق ملے گی۔
* توفیقِ الٰہی (مرشد کامل )، اللہ تعالیٰ کا فضل و کرم اور اس کی مدد شاملِ حال نہ ہو تو راہِ فقر میں کامیابی ناممکن ہے۔